یادوں کی تین سو چوبیسویں رات ۔3

"ہیلو مسٹر سید" کتاب کی رونمائی

اس کیمپ میں ٹارچرکرنے والوں میں سے ایک کا نام ہاشم تھا، جس کاھیکل استخوانی اور چہرہ سیاہ تھا۔ اس نے ٹارچر سیل میں ہم سے کہاکہ تم لوگوں کے سرپھاڑنے کی زمہ داری میری ہے

یادوں بھری رات کا یادگاری 324 واں پروگرام

موصل کیمپ کی یادیں

جب ہم موصل کے کیمپ 1 میں ان کی خدمت میں تھے ، ہم نے دیکھا کہ جب صبح اٹھتے وقت سے رات کے آخر تک وہ ایرانی قیدیوں سے متعلق معاملات میں ہمیشہ مصروف رہتےتھے اور انہیں ذاتی معاملات کا کوئی موقع نہیں ملتا تھا۔ سوائے نماز اور کھانے کے

یادوں کی تین سو تیسسویں شب ۔2

شہید چیت سازیان کا گریہ ان کی مشکلات کاحل

یادوں بھری رات کا تین سو تیئسواں پروگرام مئی کی دوسری جمعرات ، 1400 کو آرٹس سینٹر میں انسٹاگرام پر آن لائن منعقد کیا گیا۔ اس پروگرام کی انجام دہی کے لئے حسین بہزادی انچارج تھے ، جس میں کرنل "احمد حیدری" اور محترمہ "زهرا پناهی‌روا" نے اپنی یادوں کو شٸیر کی

یادوں کی تین سو چوبیسویں شب -1

سید آزدگان شہید چمران کی شہادت

میں گواہی دیتا ہوں کہ وہ پہلا شخص تھا جس نے اپنے گوریلا گروپ کے ساتھ مشہور دب حردان میں داخل ہوکر دشمن کو مارا ، جس کے نتیجے میں وہ پیچھے ہٹ جانے پر مجبور ہوگیا۔ میں اس بات کی گواہی دیتا ہوں کہ اس کا خدا کے ساتھ رات کی تاریکیوں میں رازونیازکرنا اور اس کی صبح کی دعاؤں اور دعاوں میں شفاعت اورشہادت کی تمنا کرتے ہوٸے لڑنا اسکاکلام اتناپراثرتھاکہ اس نے ہم سب کو الٹ کررکھ دیااورہماری روحوں کے آتش فشاں کو پھاڑدیا۔

یادوں کی تین سو تیسسویں شب ۔2

شہید چیت سازیان کا گریہ ان کی مشکلات کاحل

مئی کی دوسری جمعرات ، 1400 کو آرٹس سینٹر میں انسٹاگرام پر آن لائن منعقد کیا گیا۔ اس پروگرام کی انجام دہی کے لئے حسین بہزادی انچارج تھے ، جس میں کرنل "احمد حیدری" اور محترمہ "زهرا پناهی‌روا" نے اپنی یادوں کو شٸیر کیا۔

یادوں کی تین سو چوبیسویں شب -2

موصل کے کیمپ کی یادیں

جب ابو ترابی صاحب کیمپ کے لانڈری والے علاقے میں کپڑے دھو رہےہوتے تھے ، کاظم نے ان کے پاس جاکر ان سے بات کرتا۔ کیونکہ ایسا کئی بارہوچکاتھا ، یہ چیز ہمارے لئے معمہ بن گیا اور ہم نے سید سے پوچھا کہ یہ شخص ایسا کیوں دیکھاتا کہ وہ آپ کے ساتھ ہے اور آپ سے باتیں کرتا ہے؟

یادوں کی تین سو چوبیسویں شب -1

سید آزادگان شیہد چمران کی شہادت

شہید ڈاکٹر چمران نے اپنے حلف نامے میں ذکر کیا ہےکہ اس علاقے میں بہت ساری کاروائیاں کی گئیں ، اور جنگ کے ابتدائی دنوں میں ، اس کی خبر لوگوں تک پہنچی۔ دشمن کو پسپا کرنے کے لئے بہت ساری کوششوں اور قدم بہ قدم دشمن کو، ہم اہواز کے 6 کلومیٹر جنوب سے 26 کلومیٹر تک دھکیلنے میں کامیاب ہوگئے

خاطرات کی تین سو بتیسویں رات ۔۱

ہر ایرانی فوجی افسر کے خاطرات ایک مستقل کتاب میں تبدیل ہوسکتے ہیں

کچھ منٹ بعد ہوش میں آئے تو دوبارہ اپنی ذمہ داری انجام دینا کا خیال آیا لیکن وہ زخموں سے چور چور تھے انکی توانائی ختم ہورہی تھی۔ آخر کار انہوں نے وائرلیس پر اپنا آخری جملہ کہا:"میری والدہ اور امام خمینی کو کہہ دیں شیاکوہ لرز گیا لیکن انشائی کے پیروں میں لرزش نہیں آئی"

یادوں بھری رات کا ۳۱۶واں پروگرام (پہلا حصہ)

تکفیری دہشت گردوں کی اسارت میں پیش آنے والے چند واقعات

یادوں بھری رات کے ۳۱۶ویں پروگرام کا انعقاد کیا گیا جس میں تکفیری دہشت گردوں کے ہاتھوں اسیر ہونے والے " مصطفی بیدقی" اور دفاع مقدس کے مجاہد " جناب سردار علی ولی زادہ" نے شرکت کی اور اپنی مجاہدانہ زندگی میں پیش آنے والے واقعات کو بیان کیا۔ اس پروگرام کو ۲۷ اگست ۲۰۲۰ء کو آپارات ویب سائٹ کی جانب سے نشر کیا گیا۔ اس پروگرام کی میزبانی کے فرائض جناب داود صالِحی انجام دے رہے تھے۔

یادوں بھری رات کا ۳۱۵ واں پروگرام۔ دوسرا حصہ

انقلاب اسلامی ۸ سالہ جنگ کا فاتح

۲۳ جولائی ۲۰۲۰ء کی شب یادوں بھری رات کے ۳۱۵ ویں پروگرام کا انعقاد کیا گیا جس کو آپارات ویب سائٹ پر نشر کیا گیا۔ اس پروگرام میں " سید احمد قشمی" اور " ڈاکٹر حمید رضا قنبری" مہمان تھے جنہوں نے دفاع مقدس کے دوران پیش آنے والے واقعات کو ناظرین کے لیے پیش کیا اور اس پروگرام میں میزبانی کے فرائض " داؤد صالحی" انجام دے رہے تھے۔
1
...
 
11 ویں امیر المومنین ڈویژن کے شہید کمانڈر کی یاداشت

ہیلٹی - 10

ہمیں اس کا احساس اس وقت ہوا جب عراقی "رسام"  گولی ہم پر تقریبا  چھ بجے پیچھے سے چلائی گئی۔  یعنی ہم مکمل محاصرے میں تھے

جیل میں حصول علم

اسی اثنا میں ایک اور قیدی جو چوری کے جرم میں گرفتار تھا اس نے اپنی گردن کے پاس سے سوئی نکالی جو شاید ہمیشہ ہی اس کے پاس رہتی تھی اور میری ہتھکڑیاں کھول دیں اور میں نے امتحان دینا شروع کردیا۔ جب وہ سپاہی چابی لے کر واپس لوٹا تب تک میں آدھا امتحان دے چکی تھی

کہنے لگا: اسکا دل بہت دھڑک رہا ہے۔۔۔۔۔۔

ایک پولیس والے نے پستول کے بٹ سے میرے سر پر مارا ۔ مجھے احساس ہوا کہ جیسے یہ لوگ حقیقت میں مجھے مارنا چاہتے ہیں ۔ میں نے اپنے آپ سے کہا اب جب مارنا ہی چاہتے ہیں تو کیوں نہ میں ہی انہیں ماروں۔ ہمیں ان سے لڑنا چاہئے۔ میرے سر اور چہرے سے خون بہہ رہا تھا اور میں نے اسی حالت میں اٹھ کر ان دو تین سپاہیوں کا مارا۔
یادوں بھری رات کا ۲۹۷ واں پروگرام

کیمیکل بمباری کے عینی شاہدین کے واقعات

دفاع مقدس سے متعلق یادوں بھری رات کا ۲۹۷ واں پروگرام، مزاحمتی ادب و ثقافت کے تحقیقاتی مرکز کی کوششوں سے، جمعرات کی شام، ۲۲ نومبر ۲۰۱۸ء کو آرٹ شعبے کے سورہ ہال میں منعقد ہوا ۔ اگلا پروگرام ۲۷ دسمبر کو منعقد ہوگا۔"
یادوں بھری رات کا ۲۹۸ واں پروگرام

مدافعین حرم،دفاع مقدس کے سپاہیوں کی طرح

دفاع مقدس سے متعلق یادوں بھری رات کا ۲۹۸ واں پروگرام، مزاحمتی ادب و ثقافت کے تحقیقاتی مرکز کی کوششوں سے، جمعرات کی شام، ۲۷ دسمبر ۲۰۱۸ء کو آرٹ شعبے کے سورہ ہال میں منعقد ہوا ۔ اگلا پروگرام ۲۴ جنوری کو منعقد ہوگا۔
یادوں بھری رات کا ۲۹۹ واں پرواگرام (۱)

ایک ملت، ایک رہبر اور ایک عظیم تحریک

دفاع مقدس سے متعلق یادوں بھری رات کا ۲۹۹ واں پروگرام، جمعرات کی شام، ۲۴ جنوری ۲۰۱۹ء کو آرٹ شعبے کے سورہ ہال میں منعقد ہوا ۔ اس پروگرام میں علی دانش منفرد، ابراہیم اعتصام اور حجت الاسلام و المسلمین محمد جمشیدی نے انقلاب اسلامی کی کامیابی کیلئے جدوجہد کرنے والے سالوں اور عراقی حکومت میں اسیری کے دوران اپنے واقعات کو بیان کیا۔

ساواکی افراد کے ساتھ سفر!

اگلے دن صبح دوبارہ پیغام آیا کہ ہمارے باہر جانے کی رضایت دیدی گئی ہے اور میں پاسپورٹ حاصل کرنے کیلئے اقدام کرسکتا ہوں۔ اس وقت مجھے وہاں پر پتہ چلا کہ میں تو ۱۹۶۳ کے بعد سے ممنوع الخروج تھا۔