طاہرہ طاہری کے ساتھ گفتگو

رضا کار ادارے جہاد سازندگی کے واقعات، امدادی کام اور سنندج کے اسکول

طاہرہ طاہری انقلاب اسلامی کی کامیابی کے اوائل سے ہی سرگرم خواتین میں سے ایک ہیں۔ وہ رضا کارانہ طور پر اس ادارے میں بھرتی ہوئیں اور اسلامی جمہوری ایران کے خلاف صدامی فوج کی مسلط کردہ جنگ شروع ہونے کے بعد، رضاکار ادارے جہاد سازندگی کی طرف سے ہلال احمر ٹرین کے ساتھ کئی مرتبہ زخمیوں کی مدد کرنے ملک کے جنوبی علاقے میں گئیں

سورج مغرب سے طلوع ہوا

تہران کے آسمان پر کافی بڑا موڑ کاٹنے کے بعد جہاز نے لینڈ کیا۔ پہلے صحافی حضرات اور پھر امام کے ساتھی جہاز سے اُترے۔ حضرت امام کے شاگرد بھی استقبال کے لئے آئے ہوئے تھے اور ایئرپورٹ کے ہال میں جمع تھے ۔ میں بھی جب وہاں پہنچا تو کیا سنا کہ سب کے سب یہ ترانہ پڑھ رہے ہیں: اے خمینی امام ! اے خمینی امام!

" کتاب کی زبانی تاریخ" مطبوعات فرہنگ معاصر کے انچارج کی زبانی

دو زبانوں میں فرہنگ لغات کی پیداوار اور طباعت کے واقعات

ہمارا دل چاہتا تھا ہمارے پاس ہر زبان میں فرہنگ لغات کا مکمل نسخہ موجود ہو۔ ہمارا ہدف یہ تھا کہ اس نسخے کو مکمل کریں اور ہم چاہتے تھے کہ ہمارے مجموعے میں ایک فارسی لغات کی بھی فرہنگ ہو

گزشتہ دہائیوں میں شہر اراک میں ہونے والی قرآنی نشست کے بارے میں

ایک مکمل روایتی طریقہ کار

محمد رحیم بیرقی مرکزی صوبے کے ایک سرگرم قرآنی شخصیت ہیں جنہوں نے چند سالوں سے تہران میں سکونت اختیار کی ہوئی ہے۔ ار اک میں ہونے والی قرآن کریم کی سرکاری اور جدید نشستیں ہوں یا روایتی نشستیں، یہ شخصیت ہر جگہ فعال نظر آئی اور یہ یونیورسٹی میں قرآن کے استاد ہیں۔ ہم نے اُن کے ساتھ شہر اراک میں ہونے والی قرآنی نشست اور خاص طور سے مرحوم استاد محمد حسن نہرمیانی کے بارے میں بات چیت کی۔...

جنگی زخمیوں کے بارے میں اشرف بہارلو کی یادیں

آبادان میں زندگی اور طالقانی ہسپتال میں امدادی سرگرمی

آبادان میں امدادی سرگرمیوں میں حصہ لینے والی خواتین نے اس شہر کے ہسپتالوں میں زخمیوں کی خدمت کرنے میں بہت اہم کردار ادا کیا۔ یہ لوگ اپنے گھر والوں سے دور اور بغیر کسی مالی لالچ کے سپاہیوں کی مدد کیلئے ایسے شہر میں ٹھہری ہوئی تھیں جس کا دشمن نے محاصرہ کیا ہوا تھا، تاکہ اپنے زخمی بھائیوں کی دیکھ بھال کے ذریعے ان کا علاج معالجہ کریں۔ اشرف بہارلو صدامی فوج کی جمہوری اسلامی ایران پر مسلط کردہ جنگ کے دوران اُنہی جوان لیڈی امدادی کارکنوں میں سے ایک ہیں ۔ انھوں نے ایرانی اورل ہسٹری سائٹ سے آبادن اور طالقانی ہسپتال سے مربوط اپنی یادوں کے بارے میں گفتگو کی ۔

گزشتہ دہائیوں میں شہر اراک میں ہونے والی قرآنی نشست کے بارے میں

ایک مکمل روایتی طریقہ کار

استاد نہرمیانی ایک حقیقی مؤمن کی حیثیت سے بہت ہی قناعت پسند انسان تھے اور اُن کی زیادہ اخراجات والی زندگی نہیں تھی۔ اُن کا گھر بھی اُسی پرانی طرز کا ٹوٹا پھوٹا سا تھا۔ انھوں نے قرآن کی قرائت اور نشستوں کی بابت کبھی بھی پیسوں کا مطالبہ نہیں کیا

نشستیں تعمیراتی ہوتی تھیں

۱۹۶۰ ء کے عشرے سے متعلق آیت اللہ ناصر مکارم شیرازی کےجیل کے واقعات

انقلاب کے بعد جب شیراز شہر میں لوگوں نے ساواک کے دفتر پر قبضہ کیا تو انھوں نے تمام فائلیں سڑکوں پر پھینک دیں۔ کسی ایک کو میری فائل ملی تو اس نے مجھے بھجوادی۔ جناب حسینیان نے بھی ریکارڈ سنٹر سے، میرے اس زمانے کے مدارک اور ریکارڈ والے لفافے مجھے بھجوائے

دوران جنگ اور جنگ کے بعد، حمل و نقل کی پروازیں

اصغر نمازیان کی یادوں کے ساتھ گزرے لمحات کا سفر

لچسپ بات ہے کہ میں جنوری ۱۹۷۹ء میں امریکا میں پائلٹ بنا اور جنوری ۲۰۰۱ء میں اسلامی جمہوری ایران کی فضائی آرمی سے ریٹائر ہوا۔ مجھے سن ۱۹۸۸ء میں آیت اللہ خامنہ ای کی خدمت میں پہنچنے کا شرف نصیب ہوا۔

محمد رضا ناجیان اصل کی زبانی سن ۱۹۶۱ء سے سن ۱۹۸۱ء تک کے واقعات کا بیان

مجاہد اور پبلشر بن جانے والے کلاس فیلوز

ایرانی زبانی تاریخ کی ویب سائیٹ کی رپورٹ کے مطابق، "کتاب کی زبانی تاریخ" کی نشستوں کے دوسرے سلسلے کی گیارہویں نشست منگل کی صبح مورخہ ۱۱ جولائی ۲۰۱۷ء کو پروگرام کے میزبان اور ماہر نصر اللہ حدادی کی کوششوں اور مطبوعات کے انچارج محمد رضا ناجیان اصل کی موجودگی میں خانہ کتاب فاؤنڈیشن کے اہل قلم سرا میں منعقد ہوئی

دفاع مقدس کے دوران امدادی کارکن اور فوجی ٹریننگ کی استاد مریم جدلی سے بات چیت۔ آخری حصہ

مغربی محاذ سے جزیرہ خارک تک

اس گفتگو کے پہلے حصے میں ہم مریم جدلی کی جوانی کے ابتدائی سالوں سے آگاہ ہوئے جو انقلاب اسلامی کی کامیابی اور صدامی فوج کی ایران پر مسلط کردہ جنگ شروع ہونے کے ساتھ گزرے ۔ انھوں نے بتایا کہ سرپل ذھاب، ابوذر چھاؤنی کے ہسپتال اور ہلال احمر کی ٹرین میں  جو ایک چلتا پھرتا ہسپتال تھی، جنگ کے کیا کیا  مناظر اُن کی یادوں کا حصہ بنے ۔ اب آپ ایران کی زبانی تاریخ کی ویب سائٹ کے خبر نگارکی مریم جدلی سے گفتگو کے دوسرے حصے کو ملاحظہ کریں۔   آپ کا محاذ پر آنا جانا...
3
...
 

تیسری ریجمنٹ: ایک عراقی قیدی ڈاکٹر کے واقعات – پانچویں قسط

عراق کی بعثی حکومت نے سن ۱۹۸۰ء میں عراقی ہزاروں گھرانوں کو اس بہانے سے کہ اُن کی اصلیت ایرانی ہے اور وہ عراق میں ہونے والی متعدد تخریب کاریوں میں ملوث ہیں، ایران جلا وطن کردیا

کہنے لگا: اسکا دل بہت دھڑک رہا ہے۔۔۔۔۔۔

ایک پولیس والے نے پستول کے بٹ سے میرے سر پر مارا ۔ مجھے احساس ہوا کہ جیسے یہ لوگ حقیقت میں مجھے مارنا چاہتے ہیں ۔ میں نے اپنے آپ سے کہا اب جب مارنا ہی چاہتے ہیں تو کیوں نہ میں ہی انہیں ماروں۔ ہمیں ان سے لڑنا چاہئے۔ میرے سر اور چہرے سے خون بہہ رہا تھا اور میں نے اسی حالت میں اٹھ کر ان دو تین سپاہیوں کا مارا۔
یادوں بھری رات کا ۲۹۷ واں پروگرام

کیمیکل بمباری کے عینی شاہدین کے واقعات

دفاع مقدس سے متعلق یادوں بھری رات کا ۲۹۷ واں پروگرام، مزاحمتی ادب و ثقافت کے تحقیقاتی مرکز کی کوششوں سے، جمعرات کی شام، ۲۲ نومبر ۲۰۱۸ء کو آرٹ شعبے کے سورہ ہال میں منعقد ہوا ۔ اگلا پروگرام ۲۷ دسمبر کو منعقد ہوگا۔"
یادوں بھری رات کا ۲۹۸ واں پروگرام

مدافعین حرم،دفاع مقدس کے سپاہیوں کی طرح

دفاع مقدس سے متعلق یادوں بھری رات کا ۲۹۸ واں پروگرام، مزاحمتی ادب و ثقافت کے تحقیقاتی مرکز کی کوششوں سے، جمعرات کی شام، ۲۷ دسمبر ۲۰۱۸ء کو آرٹ شعبے کے سورہ ہال میں منعقد ہوا ۔ اگلا پروگرام ۲۴ جنوری کو منعقد ہوگا۔
یادوں بھری رات کا ۲۹۹ واں پرواگرام (۱)

ایک ملت، ایک رہبر اور ایک عظیم تحریک

دفاع مقدس سے متعلق یادوں بھری رات کا ۲۹۹ واں پروگرام، جمعرات کی شام، ۲۴ جنوری ۲۰۱۹ء کو آرٹ شعبے کے سورہ ہال میں منعقد ہوا ۔ اس پروگرام میں علی دانش منفرد، ابراہیم اعتصام اور حجت الاسلام و المسلمین محمد جمشیدی نے انقلاب اسلامی کی کامیابی کیلئے جدوجہد کرنے والے سالوں اور عراقی حکومت میں اسیری کے دوران اپنے واقعات کو بیان کیا۔

ساواکی افراد کے ساتھ سفر!

اگلے دن صبح دوبارہ پیغام آیا کہ ہمارے باہر جانے کی رضایت دیدی گئی ہے اور میں پاسپورٹ حاصل کرنے کیلئے اقدام کرسکتا ہوں۔ اس وقت مجھے وہاں پر پتہ چلا کہ میں تو ۱۹۶۳ کے بعد سے ممنوع الخروج تھا۔