دشمن کی شدید گولہ باری میں شہید قاسم سلیمانی سے مذاق

یادوں بھری رات کا ۳۱۱ واں پروگرام – تیسرا حصہ

بس میں نے فیصلہ کرلیا کہ ان کے ساتھ کام کروں گا۔ جب ہم واپس آئے تو شہید قاسم سلیمانی نے پوچھا : کیا صورت حال ہے ؟ میں نے کہا اگر آپ اجازت دیں تو میں تہران جاکر اپنا ایک ضروری کام کر کے واپس آجاتاہوں؟

تیسری ریجمنٹ: ایک عراقی قیدی ڈاکٹر کے واقعات – ۳۷ ویں قسط

بظاہر وہ افسر اہواز آرمرڈ ڈویژن کا حصہ تھا۔ بیسویں بریگیڈ جو ایک ایرانی فوجی کو گرفتار کرنے کی تمنا کر رہی تھی اچانک اپنے چنگل میں ایک میجر کو دیکھ رہی تھی۔ اسی لیے گشتی یونٹ کے کمانڈر اور اس کے ساتھی سپاہیوں کی حوصلہ افزائی کی گئی

ایام زندگی کی داستان

یادوں بھری رات کا ۳۱۱ واں پروگرام – دوسرا حصہ

یادوں بھری رات کے پروگرام کی دوسری راوی محترمہ فوزیہ مدیح ہیں جنہوں نے ۸ سالہ جنگ میں دیگر خواتین کے ساتھ بڑھ چڑھ کر حصہ لیا۔ ۲۱ سالہ لڑکی جس نے جنگ کو اپنی آنکھوں سے دیکھا اور خرم شہر کو عراقی فوج کے ہاتھوں میں جاتا ہوا دیکھا

تیسری ریجمنٹ: ایک عراقی قیدی ڈاکٹر کے واقعات - چھتیسویں قسط

ہماری پوزیشنز کے سامنے ایک بڑا گاؤں واقع تھا جس کا نام "کوہہ" تھا اور اس گاؤں کے چاروں طرف ایک گھنا جنگل تھا۔ ریجمنٹ کے لوگ متعدد جنگی-گشتی آپریشنز پر بھیجے جاتے تھے لیکن ان میں سے کوئی بھی "کوہہ" گاؤں تک نہیں پہنچتا تھا

ایک خاتون زائر کے مطابق:

امام حسین علیہ السلام کے لیے وقف شدہ مکانات

ایک شور و غل برپا تھا۔ گھروں کے سامنے استقبال شروع ہوا اور گھروں کے مالک خندہ پیشانی سے زائرین کا انتظار کر رہے تھے۔ ہم جس گلی کوچے سے گزرتے وہاں کے اکثر گھروں کے دروازے زائرین کے لیے کھلے ہوئے تھے اور زائرین کے لیے واش روم، غسل خانے اور واشنگ مشینیں موجود تھیں

پاکستان میں اربعین حسینی 2020

اس سال پاکستان میں اربعین امام حسین علیہ السلام کا کچھ اور ہی رنگ تھا کیوں کہ اس سال شیعان حیدر کرار علیہ السلام اور سلفی و وھابی فکر کے حامل افراد میں تصادم کی صورتحال پیش آئی تھی۔

گوهرالشریعه دستغیب سنارہی ہیں

شوہر کے بھائی رحیم کی گرفتاری کی داستان

دکھ اور صبر

پوچھ تاچھ کرنے والے نے اس سے دو تین بار پوچھا: " تم نے اپنے چچا کو کوئی کاغذ دیا تھا؟" بچے کی آواز نہیں نکل رہی تھی۔ میں سمجھ گئی کہ وہ پریشان ہے۔ اسے ان سے چھڑوانے کے لیے میں نے دروازے کے پیچھے سے کہا: " سر! ہمارا ملازم "مشہدی رضا" اپنے بیوی بچوں سے ملنے کے لیے گاؤں گیا ہوا تھا۔ میں بھی ملازم ہوں اس لیے میں نے "مشہدی رضا" کے واپس آنے تک بچے کو اس کے چچا کے پاس چھوڑ دیا تھا۔

سید کاظم اکرمی کی داستان

دوبارہ گرفتاری!

میں نے کہا جو کرنا ہے کر لو لیکن اسلحے سے میرا کوئی کام نہیں تھا میں صرف تبلیغ اور جوانوں کی تربیت کے علاوہ کوئی کام نہیں کرتا تھا۔ یہ لوگ ظاہراً کچھ قرائن و شواہد سے سمجھ گئے تھے کہ میں ٹھیک کہہ رہا ہوں

شام کی داستان

یادوں بھری رات کا ۳۱۱ واں پروگرام – پہلا حصہ

خاک سے بھرے کھانے کے ٹِن

ایرانی اورل ہسٹری سائٹ کی رپورٹ کے مطابق، دفاع مقدس سے متعلق یادوں بھری رات کا ۳۱۱ واں پروگرام، دفاع مقدس میں خواتین کے کردار کو سراہنے کے لئے، جمعرات کی شام، ۲۰ فروری ۲۰۲۰ء کو آرٹ شعبے کے سورہ ہال میں منعقد ہوا ۔ اس پروگرام میں محترمہ ترابی، سیدہ فوزیہ مدیح اور حاج مہدی زمردیان نے اپنے واقعات بیان کیے

موسم گرما کے واقعات

تیسری ریجمنٹ: ایک عراقی قیدی ڈاکٹر کے واقعات - پینتیسویں قسط

سن 1981ء کا موسم گرما جیسے ہماری بریگیڈ کے ٹھکانے پر ایرانی فورسز کے آرام کرنے کا موسم تھا۔ جنگ کی اہم سرگرمیاں ایک دوسرے پر فائرنگ، جنگی-جاسوسی گشتی آپریشنز اور گھات لگانے کے عمل تک محدود تھیں۔ اس کے باوجود کہ ایرانی فورسز سست پڑ گئی تھیں اور تھکن محسوس کر رہی تھیں لیکن ہماری فورسز تمام دفاعی تدابیر اپنانے کے بعد مکمل طور پر الرٹ رہتی تھیں۔

چھ روزہ جنگ کے وقت کا خطاب

میرے درس کے شرکاء سیاسی (بادشاہت سے مخالفت میں) اور علمی (قرآنی) لحاظ سے میرے ساتھ ہم فکر ہوگئے تھے باوجود اس کے کہ نجف میں قم کی نسبت بیشتر ایسی فضا غالب تھی کہ جب تک کوئی استاد طلاب کو وظیفہ نہ دیتا اس کے درس میں کوئی خاص شرکت نہیں ہوتی تھی

مسلح انقلابی ٹیم کے باقی اعضاء کی گرفتاری

رضا تو یہ سوچ بھی نہیں سکتا تھا کہ حادثے سے اگلے دن ہی یہ لوگ پہچانے جائیں گے، وہ مرتضیٰ سے کہتا ہے کہ جلدی سے ایک چکر گھر کا لگا لوں تاکہ کچھ لباس اور سامان اٹھا لوں اور پھر مل کر حاج صادق کے پاس چلتے ہیں اس کے گھر میں داخل ہوتے ہی انٹیلی جنس کے افراد جو اس کے انتظار میں تھے اسے گرفتار کر لیتے ہیں
 

تیسری ریجمنٹ: ایک عراقی قیدی ڈاکٹر کے واقعات – ۳۷ ویں قسط

بظاہر وہ افسر اہواز آرمرڈ ڈویژن کا حصہ تھا۔ بیسویں بریگیڈ جو ایک ایرانی فوجی کو گرفتار کرنے کی تمنا کر رہی تھی اچانک اپنے چنگل میں ایک میجر کو دیکھ رہی تھی۔ اسی لیے گشتی یونٹ کے کمانڈر اور اس کے ساتھی سپاہیوں کی حوصلہ افزائی کی گئی

کہنے لگا: اسکا دل بہت دھڑک رہا ہے۔۔۔۔۔۔

ایک پولیس والے نے پستول کے بٹ سے میرے سر پر مارا ۔ مجھے احساس ہوا کہ جیسے یہ لوگ حقیقت میں مجھے مارنا چاہتے ہیں ۔ میں نے اپنے آپ سے کہا اب جب مارنا ہی چاہتے ہیں تو کیوں نہ میں ہی انہیں ماروں۔ ہمیں ان سے لڑنا چاہئے۔ میرے سر اور چہرے سے خون بہہ رہا تھا اور میں نے اسی حالت میں اٹھ کر ان دو تین سپاہیوں کا مارا۔
یادوں بھری رات کا ۲۹۷ واں پروگرام

کیمیکل بمباری کے عینی شاہدین کے واقعات

دفاع مقدس سے متعلق یادوں بھری رات کا ۲۹۷ واں پروگرام، مزاحمتی ادب و ثقافت کے تحقیقاتی مرکز کی کوششوں سے، جمعرات کی شام، ۲۲ نومبر ۲۰۱۸ء کو آرٹ شعبے کے سورہ ہال میں منعقد ہوا ۔ اگلا پروگرام ۲۷ دسمبر کو منعقد ہوگا۔"
یادوں بھری رات کا ۲۹۸ واں پروگرام

مدافعین حرم،دفاع مقدس کے سپاہیوں کی طرح

دفاع مقدس سے متعلق یادوں بھری رات کا ۲۹۸ واں پروگرام، مزاحمتی ادب و ثقافت کے تحقیقاتی مرکز کی کوششوں سے، جمعرات کی شام، ۲۷ دسمبر ۲۰۱۸ء کو آرٹ شعبے کے سورہ ہال میں منعقد ہوا ۔ اگلا پروگرام ۲۴ جنوری کو منعقد ہوگا۔
یادوں بھری رات کا ۲۹۹ واں پرواگرام (۱)

ایک ملت، ایک رہبر اور ایک عظیم تحریک

دفاع مقدس سے متعلق یادوں بھری رات کا ۲۹۹ واں پروگرام، جمعرات کی شام، ۲۴ جنوری ۲۰۱۹ء کو آرٹ شعبے کے سورہ ہال میں منعقد ہوا ۔ اس پروگرام میں علی دانش منفرد، ابراہیم اعتصام اور حجت الاسلام و المسلمین محمد جمشیدی نے انقلاب اسلامی کی کامیابی کیلئے جدوجہد کرنے والے سالوں اور عراقی حکومت میں اسیری کے دوران اپنے واقعات کو بیان کیا۔

ساواکی افراد کے ساتھ سفر!

اگلے دن صبح دوبارہ پیغام آیا کہ ہمارے باہر جانے کی رضایت دیدی گئی ہے اور میں پاسپورٹ حاصل کرنے کیلئے اقدام کرسکتا ہوں۔ اس وقت مجھے وہاں پر پتہ چلا کہ میں تو ۱۹۶۳ کے بعد سے ممنوع الخروج تھا۔